Posts

Image
ایک عالمِ دین امامت کی نوکری سے بیزار کیوںﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ 44 ﺳﺎﻝ ﺳﮯ ﺍﺱ ﻣﺴﺠﺪ ﻣﯿﮟ ﺍﻣﺎﻣﺖ ﮐﮯ ﻓﺮ ﺍ ﺋﺾ ﺍﻧﺠﺎﻡ ﺩﮮ ﺭﻫﮯ ﺗﮭﮯ ،ﺍﺱ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﺍﻥ ﮐﮯ ﻭﺍﻟﺪ ﯾﮧ ﻓﺮﺍئض 27 ﺳﺎﻝ ﺍﻧﺠﺎﻡ ﺩﯾﺘﮯ ﺭﻫﮯ ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺍﭘﻨﯽ ﺣﯿﺎﺕ ﻣﯿﮟ ﮨﯽ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﮐﻮ ﺟﻮ ﺗﻌﻠﯿﻢ ﺳﮯ ﻓﺎﺭﻍ ﮨﻮﮰ ﺗﻮ ﺍﭘﻨﯽ ﻣﺴﺠﺪ ﮐﯽ ﺫﻣﮧ ﺩﺍﺭﯼ ﺳﻮﻧﭗ ﮐﺮ ﮐﭽﮫ ﻋﺮﺻﮧ ﺑﯿﻤﺎﺭ ﺭﮦ ﮐﺮ ﺩﺍﻋﯽ ﺍﺟﻞ ﮨﻮﮰ ،ﺍﺏ ﭘﮭﺮ ﺍﯾﮏ ﺑﺎﺭ ﻭﮨﯽ ﺻﻮﺭﺗﺤﺎﻝ ﮬﮯ ﻣﮕﺮ ﺣﺎﻓﻆ ﺻﺎﺣﺐ ﻣﺴﺠﺪ ﺍﻭﺭ ﻣﻌﺎﻣﻼﺕ ﻣﺴﺠﺪ ﺳﮯ ﮐﻮﺳﻮﮞ ﺩﻭﺭ ﺭﮨﻨﺎ ﭼﺎﮨﺘﮯ ﮨﯿﮟ ،ﺩﻭﺳﺮﯼ ﻃﺮﻑ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﮐﻮ ﺍﭘﻨﯽ ﺻﺤﺖ ﮐﮯ ﻟﺤﺎﻅ ﺳﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺳﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﻣﯿﺪ ﺑﺎﻗﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮨﻨﮯ ﻟﮕﯽ ،
ﻣﮕﺮ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﮐﻮ ﺩﻧﯿﺎ ﺳﮯ ﺟﺎﻧﮯ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺍﭘﻨﮯ ﺣﺎﻓﻆ ﺑﯿﭩﮯ ﮐﮯ ﻣﺴﺠﺪ ﮐﮯ ﻣﻌﺎﻣﻼﺕ ﺳﮯﺩﻭﺭﯼ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﮑﺎﺭ ﭘﺮ ﻏﻢ ﮐﮭﺎ ﺋﮯ ﺟﺎ ﺭﮨﺎﺗﮭﺎ ،ﺍﯾﮏ ﺩﻥ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﻧﮯ ﺗﮩﯿﮧ ﮐﺮ ﻟﯿﺎ ﮐﮧ ﺁﺝ ﺟﯿﺴﮯ ﺑﮭﯽ ﮨﻮﺍ ،
ﻣﯿﮟ ﺍﭘﻨﮯ ﺑﯿﭩﮯ ﮐﻮ ،ﺍﺱ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﭘﯿﮍھیﻧﺴﻞ ﮐﻮ ﺩﯾﻦ ﮐﯽ ﺫﻣﮧ ﺩﺍﺭﯼ ،ﻣﺴﺠﺪ ﮐﯽ ﺫﻣﮧ ﺩﺍﺭﯼ ﭘﺮ ﺭﺍﺿﯽ ﮐﺮ ﮐﮯھی ﭼﮭﻮﮌﻭﮞ ﮔﺎ ،ﺩﻭﺳﺮﯼ ﻃﺮﻑ ﺳﮯ ﺑﯿﭩﺎ ﺑﯿﻤﺎﺭ ﺍﺑﻮ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺁﺝ ﻣﻌﻤﻮﻝ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﻓﺮﻭﭦ ﺍﻭﺭ ﺟﻮﺱ ﻟﮯﮐﺮ ﮔﮭﺮ ﺁﺗﺎ ﮬﮯ ،
ﮔﮭﺮ ﭘﮩﻨﭻ ﮐﺮ ﺣﺎﻓﻆﺻﺎﺣﺐ ﻧﮯ ﻓﺮﻭﭦ ﮐﻮ ﺩﮬﻮ ﮐﺮ ﺍﭘﻨﮯ ﮨﺎﺗﮭﻮﮞ ﺳﮯ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﮐﻮ ﮐﮭﻼﯾﺎ ،
ﺩﻭﺍ ﺋﯽ ﺑﮭﯽ ﺣﺴﺐ ﺭﻭﭨﯿﻦ ﺩﯼ ،
ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﻧﮯ ﺑﮭﯽ ﺣﺴﺐ ﺭﻭﭨﯿﻦ ﺣﺎﻓﻆ ﺻﺎﺣﺐ(بیٹے) ﮐﻮ ﺩﻋﺎﺋﯿﮟ ﺩﯼ،
ﻋﺼﺮ ﺳﮯ ﺭﺍﺕ ﺑﻌ…
Image
اللہ و اسکے رسول صلی اللہ علیہ والہ وسلم کا جتنا شکر ادا کروں کم ہے کہ رب تبارک و تعالی نے مجھے بھی خدمت دین کے لیے چنا اور منہاج القرآن کا ایک ادنی سا سپاہی بنایا اور سب سے بڑھ کر اس بات کا جتنا شکر ادا کروں کم ہے کہ اللہ تعالیٰ نے مجھے منہاج یوتھ لیگ کراچی کی ایک نوکری ایک ذمہ دارای کے لئے بھی منتخب کیا,  میں زندگی  بھر بھی اگر رات دن مسلسل خدمت کرتا رہوں تو بھی اسکا حق ادا نہیں کرسکتا مگر رب تبارک و تعالٰی کی رحمت و اسکے رسول صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی نظر کرم کے طفیل ابھی ذمہ داری ملے چند ماہ ہی ہوئے تھے کہ منہاج یوتھ لیگ کی کراچی میں موجود 44صوبائی حلقاجات میں سے 30 صوبائی حلقہ جات میں تنظیمات بن گئی, ابھی تنظیمات بنانے کی مصروفیات میں ہی لگے تھے کہ پے در پے ایونٹس بھی آنا شروع ہوگئے جس میں سے بڑے ایونٹس میں سب سے پہلے مجدد رواں صدی قائد انقلاب  حضور شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری صاحب کی سالگرہ کا موقع آیا تو کراچی میں یوتھ لیگ کے تحت ایک مرکزی اور 6ڈسٹرکٹ میں شاندار پروگرام کا انعقاد کیا گیا, مرکزی یوتھ پارلیمنٹ لاہور میں کراچی سے پہلی بار 6 ذمہ داران نے شرکت کی. پھر شہر …
"مجھ سے محبت کے دعویدار ہی ایک دن مجھے بھی زمین بوس کر آئینگے"پچھلی شام کی بات ہے کہ میرے پاس ایک کال آئی اور مجھے اطلاع دی گئی کہ میرے پیارے کزن، بچپن کے دوست کو اللہ تعالی نے ایک بہت معصوم سا بہت پیارا سا بیٹا عطا کیا ہے لیکن ساتھ ہی بری خبر یہ دی کہ اس معصوم بچے نے اس دنیا میں آنکھ ہی نہیں کھولی۔ میں یہ خبر سنتے ہی امی جان کو لیکر کزن کے گھر پہنچا تو دیکھا کہ اس معصوم سے بچے کو کفن میں لپیٹ رکھا ہے، کفن کھول کر جب اس کا چہرہ دیکھا تو بہت ہی پیارا اور خوبصورت بچہ تھا لیکن اللہ کو جو منظور تھا اس میں ہم کر بھی کیا کرستکے تھے۔ تھوڑی ہی دیر ہوئی تھی کہ آواز آئی کہ چلو قبرستان لے چلتے ہیں اور بچے کے باپ یعنی میرے کزن نے بچہ کی لاش کو گود میں لیا اور ہم قبرستان کی طرف چل پڑے۔ قبرستان جانے کہ بعد قبرستان میں جگہ ڈھونڈنے لگے چونکہ قبرستان بہت چھوٹا سا تھا تو جگہ ڈھونڈنے میں تھوڑا وقت لگ گیا اور آخرکار قبرستان کے ایک کونے میں جگہ نظر آئی تو وہاں میرے انکل نے قبر کھودنا شروع کی اور دیکھتے ہی دیکھتے قبر مکمل کھود لی اور میرے ہے سامنے اس معصوم بچے کو اس کے دادا جان نے اپنے ہاتھوں سے…
Image
Sarim Noor Attended Itikaf City 2018

The Itikaf is the annual ten day seclusion which takes place in the last ten days of the Holy Month of Ramadhan. This practice is optional for Muslims and can be performed alone or collectively. It is an advance form of self purification and spiritual uplift which takes the performer into a domain which is not in the scope of fasting which is a lower form of this spiritual venture. Collective Itikaf is performed all over the world with the most famous venues being the Masjid al-Haram in Makkah and Masjid Nabavi in Madinah. The collective Itikaf is the Sunnah of the Prophet (SAW) and holds higher reward and benefit. The collective Itikaf performed by the Holy Prophet SAW in Masjid Nabavi with the Sahabah was a unique spiritual training camp which consisted of the Holy prophet (SAW) lecturing, teaching and practically training the Sahabah with special regards to gaining a high spiritual status. The Collective Itikafs present in the world today, are on…
Image
Sarim Noor Visited Mazar-e-Quaid
(Urdu: مزار قائد‬‎), also known as the Jinnah Mausoleum or the National Mausoleum, is the final resting place of Quaid-e-Azam ("Great Leader") Muhammad Ali Jinnah, the founder of Pakistan. Designed in a 1960s modernist style, the mausoleum also contains the tomb of his sister, Māder-e Millat ("Mother of the Nation") Fatima Jinnah, and that of Liaquat Ali Khan, the first Prime Minister of Pakistan. The mausoleum was completed in 1970, and is an iconic symbol of Karachi. The mausoleum is one of the most popular tourist destinations in Karachi. Designed in a 1960s modernist style. The mausoleum is located in the Jamshed Quarters neighborhood of Karachi, along the northern edge of the colonial-era core. The mausoleum is surrounded by a large garden which offers a calm and tranquil environment in the large and bustling metropolis. The illuminated tomb can be seen at night from far distances.
Image
Sarim Noor Visited Minhaj ul Quran International With Friends.
Minhaj-ul-Quran International a Pakistan-based international organization working to promote peace, tolerance, interfaith harmony and education, tackle extremism and terrorism, engage with young Muslims for religious moderation, promote women’s rights, development and empowerment, and provide social welfare and promotion of human rights.
In order to promote and propagate true Islamic teachings and philosophy, revive Islamic sciences, and for the moral and spiritual uplift of Muslim Umma, dissatisfied with the existing religious institutions and organizations and their narrow-minded approach, Dr Qadri founded Minhaj-ul-Quran in 1980. Headquarters of MQI are situated in Lahore. Vigorously pursuing its well-defined objectives and spreading its comprehensive and all-encompassing sphere of activity, including welfare, education, promotion of love culture and spiritual uplift all over the world, it is probably one of the largest n…
Image
Sarim Noor Visited Gosha e Durood Minhaj ul Quran,
For the first time in history a full time institution has been setup where anybody can apply to sit for reciting Salat and Salam on the beloved Prophet Muhammad (SWS) a unique way to promote the love for the beloved and to increase spiritually. That blessed place will have people reciting Durood Sharif and reciting the Holy Qur'an non stop on daily basis, 24 hours a day, every week, every month and it will continue inshah allah forever. A group of 8 people will be sitting in the blessed area to take part in the unique spiritual retreat for at least 10 days or however they wish to. The 8 people will be replaced by another 8 people who will recite at night. The participants will be fasting and will stay in Wudu all the time. Food will be provided by Minhaj-ul-Quran. Monthly, over 50 million greetings and salutations will be presented to the beloved Prophet (sws) along with 30 Qur'ans. The official opening ceremony of Gosha-e-Duro…
Image



Sarim Noor Visited Sunway Lagoon.

Sunway Lagoon is the one-stop place for fun, whether you are aged 8 or 80! With over 90 attractions spread across 88 acres, Sunway Lagoon  provides the ultimate theme park experience in 6 adventure zones — Water Park, Amusement Park, Wildlife Park, Extreme Park, Scream Park & Nickelodeon Lost Lagoon– Asia’s 1st Nickelodeon Themed Land.
Once you step in, you can spend the entire day here! Explore the various dining options available at the theme park. If you need some place to sleep, just next door to the Sunway Resort Hotel & Spa. Sunway Lagoon will conduct bag checks at the entrance of the park to ensure a safe and comfortable environment for all guests. Sunway Lagoon strives to ensure that the common areas are smoke-free. For the comfort of all our guests, smoking is permitted only in designated smoking areas. 


Image
Sarim Noor Visited Hawke's Bay Karachi.
Hawke's Bay Or Hawkesbay is a beach in Karachi, Sindh, Pakistan located 20km at south-west of Karachi. This beach is named after Bladen Wilmer Hawke, who owned a beach house here in 1930s. Hundreds of people visit here daily for swimming, camel and horse riding and for vacations.  This is beach is known for being a nesting ground of Green Sea Turtles that are classified Endangered by IUCN.
Image
Sarim Noor Visited Data Darbar With Friends
also spelt Data Durbar; Urdu: داتا دربار‬‎), located in the city of Lahore, Punjab, Pakistan is the largest Sufi shrine in South Asia. It was built to house the remains of the Muslim mystic, Abul Hassan Ali Hujwiri, commonly known as Data Ganj Baksh (R.A), who is believed to have lived on the site in the 11th century CE. The site is considered to be the most sacred place in Lahore, and attracts up to one million visitors to its annual urs festival. The shrine is located near the Bhati Gate of the Walled City of Lahore. The shrine was originally established as a simple grave next to the mosque which Hujwiri had built on the outskirts of Lahore in the 11th century. By the 13th century, the belief that the spiritual powers of great Sufi saints were attached to their burial sites was widespread in the Muslim world, and so a larger shrine was built to commemorate the burial site of Hujwiri during the Mughal period. The shrine complex was expanded …
Image
Sarim Noor Visited in Balochistan and Shrine of Bilawal Shah Noorani (R.A)
(Urdu: بلاول شاہ نورانی) was a mystic saint from Balochistan. Shah Noorani (R.A) was the descendants of Ali Ibn Abi Talib. Noorani is considered to be a patron saint of Balochistan. Shah Noorani's (R.A) shrine is popuplar in Balochistan, Pakistan after Hinglaj Mata Mandir. His shrine is located in a narrow valley between the mountains of Khuzdar District, Balochistan. Shah Noorani's (R.A) annual Urs (death anniversary celebration), held on the 10th Ramadan – the ninth month of the Muslim lunar calendar, brings more than half a million pilgrims from all over Pakistan.
Image
Sarim Noor Visited Sehven Sharif.
His real name is Syed Usman Marvandi (R.A) (1177 – 1274), popularly known as Lal Shahbaz Qalandar (R.A) (Sindhi: لعل شھباز قلندر‎), was a Sufi saint and religious-poet of present-day Pakistan and Afghanistan. He is highly regarded and respected by people of all religions because he preached religious tolerance among Muslims and Hindus. He was called Lal ("ruby-colored") after his usual red attire and "Shahbaz" to denote a noble and divine spirit and "Qalandar" as he was a wandering holy man. The spiritual song "Dama Dam Mast Qalandar" glorifies Lal Shahbaz Qalandar's teachings, and the song is widely used in Pakistan, India, Afghanistan and Bangladesh. Originally written in the 13th century, the song has been sung by various singer since than, and is widely popular in the sub-continent. Lal Shahbaz Qalandar, son of Ibrahim Kabeeruddin, was born in Maiwand, today's Afghanistan. His ancestors had migrated f…
ایک مزدور اور اس کی بیوی پریشان بیٹھے تھے ۔ بیوی نے پوچھا تم کیوں پریشان ہو ؟  مزدور بولا : "میں جن صاحب کی کوٹھی پر مزدوری کر رہا ہوں ، کل ان کی چھٹی ہے۔ جس دن ان کی چھٹی ہوتی ہے ، وہ کوٹھی پر آ کر ایک ایک انچ کا جائزہ لیتے ہیں ، کوئی نقص نکل آے تو ٹھیکیدار ہم مزدوروں کے پیسے کاٹ لیتا ہے ۔ بس یہی پریشانی ہے ۔ ۔ ۔ اور تم بتاؤ تم کیوں پریشان ہو ؟" بیوی بولی : "جن ڈاکٹر صاحبہ کے گھر میں کام کرتی ہوں ، کل ان کی چھٹی ہے ۔ جس دن ان کی چھٹی ہو اس دن سر پر کھڑے ہو کر کام کرواتی ہیں ۔ کہتی ہیں کہ ایک ایک tile میں تمہاری شکل نظر آنی چاہیے ۔ پتہ نہیں کل کس بات کی چھٹی ہے !" ان کا چھوٹا بیٹا بولا :" میں بتاتا ہوں ، کل یومِ  مزدور ہے ۔ اس لئے سب بڑے صاحب چھٹی کریں گے!" مزدور اور اس کی بیوی نے حیرت سے بیٹے کو دیکھا اور پوچھا :"تمہیں کیسے پتہ ؟" بیٹا بولا : "آج استاد کہہ رہا تھا کہ صبح 7 بجے سروس سٹیشن پہنچ جانا ۔ 7 بجے سے دیر ہوئی تو پسلیاں توڑ دوں گا ۔ کل یومِ  مزدور ہے اور صاحب لوگوں کی چھٹی ہے ، گاڑیوں کا زیادہ رش ہو گا ۔ ۔ ۔ " #1stMay# LabourD…
"موجودہ حالات کے ذمہ دار کوئی اور نھیں ھم(عوام) خود ھیں۔"
اس نے ھمارے ملک پاکستان کو لوٹا، اس نے مھنگائی کی، اس نے یہ کیا اس نے وہ کیا، اس نے ڈھانڈلی کی تو اس نے ملک کا امن خراب کیا، آجکل اس طرح کے جملے ھم(عوام) اپنے زبان سے کھتے رھتے ھیں اور سامنے ایک شخص ھوتا ھے جو بھت مزے سے سنتا ھے اور پھر وہ بھی کچھ اسی طرح کے جملے تھوڑا اور مرچ مصالحہ لگا کر کھتا ھے مگر افسوس کبھی ھم یہ نھیں سوچتے کہ ھم نے خود کیا کیا ؟ اورنہ ھی اپنے گریبان میں جھاک کر دیکھتے ھیں کہ اس نے تو جو کیا وہ کیا لیکن ھم نے کیا کیا ؟؟؟
• پاکستان کی موجودہ حالت(کرپشن، غربت، قتل عام، ناانصافی) کو دیکھتا ھوں تو وہ حدیث مبارک یاد آتی ھے جس کا مفھوم کچھ یوں ھے کہ "جیسی رعایاں(عوام) ھوگی ان پر ویسے ھی حکمران مسلط کیۓ جائینگے"(اللہ تعالی کمی بیشی معاف کرے) مگر اس حدیث مبارک کے بعد کچھ کھنا باقی نھیں رھتا سوائے اس کے کہ پھلے ھمیں اپنے گریبان میں جھاکنا چاھئے نہ کہ کسی اور کے گریبان میں، آج پاکستان کی جو بھی حالت ھے اس کا ذمہ دار نہ کوئی حکمران ھے، نہ تو کوئی محافظ اور نہ ھی کوئی منصف، اس کے ذمہ دار صرف اور صرف…
ایک سوچ میں بس اسٹاپ پہ کھڑا اس شخص کو جو دیکھنے میں کافی ہینڈسم اور پڑھا لکھا نظر آرہا تھا کافی دیر سے گھوررہا تھا کیونکہ وہ شخص اتنی ہی دیر سے بس اسٹاپ کھڑی اپنے چھوٹے سے بچے کے ساتھ ایک اکیلی خاتون کو مسلسل گھورے جارہا تھا جو کچھ ہی فاصلہ پر کھڑیں تھیں، تھوڑی ہی دیر میں ای بس کو خاتون نے رکنے کا اشارہ کیا، بس اسٹاپ پر آکر رکی اور خاتون بس میں سوار ہوگئی، خاتون تو چلی گئی لیکن میں اس شخص کو گھورنا نہیں چھوڑا کیونکہ میری نیت اس اس بات کا احساس دلانا تھا کہ کسی کو کسی کا گھورنا کس قدربرا لگ سکتا ہے اور ہوا بھی یہی ٹھوڑی ہی دیر گزری تھی کہ وہ شخص میری طرف آیا اور آتے ہی میرا گیریبان پکڑلیا، میں نے پیچھے ہٹتے ہوئے اس سے کہا ارے بھائی کیا ہوا؟ چھوڑیں میرا گریبان، بلاوجہ میں گلے پڑرہے ہیں۔ اس نے کہا ابے تو مجھے اتنی دیر سے کیوں گھوررہا ہے؟ میں نے کہا، کیا ہوا بھائی آپکو دیکھنا گناہ ہے کیا؟ جب آپ بس اسٹاپ پہ کھڑی اس خاتون کو گھورہے تھے تو میں آپ کو گھورنے لگا اس میں کیا مضائقہ؟ جب آپ کو کسی پرائی عورت کو دیکھا اور گھورنا برا نہیں لگتا تو میرا آپ کو گھورنا برا کیوں لگا؟ شرمندگی کے احساس کے…
حضرت بلال کی آخری اذان جسے ﺳﻦ ﮐﺮ ﭘﻮﺭﺍ ﻣﺪﯾﻨﮧ ﺭﻭ ﺩﯾﺎ:ﺣﻀﻮﺭ ﷺ ﮐﮯ ﻭﺻﺎﻝ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﺳﯿﺪﻧﺎ ﺑﻼﻝ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ نے قسم کھائی کے میں آج کے بعد، میں اذان نہیں دوں گا "کیونکہ اگر نبی ﷺ کا دیدار نہیں تو اذان بھی نہیں"مدینے میں رہنا مشکل ہوا تو ملک شام چلے گئے. 6 مہینے مدینے لوٹ کر نہیں آئے تو اللہ کے نبی ﷺ خواب میں ملے اور فرمانے لگے.ﺍﮮ ﺑﻼﻝ.. ﯾﮧ ﮐﯿﺎ بے ﻭﻓﺎﺋﯽ؟ ہمارے شہر آنا ہی چھوڑ دیا؟ﺳﯿﺪﻧﺎ ﺑﻼﻝ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ کو یوں لگا کے آپ ﷺ ابھی حیات ہیں اور بلا رہے ہیں تو آپ نے ﺍﻭﻧﭩﻨﯽ کو تیار کیا، 7دن اور 7رات سوائے نماز اور حاجت کے آپ کہیں نہیں رکے، چل سو چل.. چل سو چل..جیسے ہی ﻣﺪﯾﻨﮧ پہنچے تو شور مچا دیا کہ یا رسول اللہ میں آ گیا یا رسول اللہ میں آ گیا.. آگے دیکھا تو قبر مبارک، آپ ﷺ تو تھے نہیں تو غش کھا کر قبر پر گر گئے اور کہنے لگے کہ یا رسول اللہ ﷺ میں تو آ گیا آپ کہاں چلے گئے..؟؟ﻣﺪﯾﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﺧﺒﺮ آگ کی طرح ﭘﮭﯿﻞ ﮔﺌﯽ ﮐﮧ ﻣﺆﺫﻥِ ﺭﺳﻮﻝ ﺣﻀﺮﺕ ﺑﻼﻝ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ واپس مدینہ تشریف لے آئے ﮨﯿﮟ.نماز کا وقت آ گیا اور سارے مدینے والوں کی خواہش کے آج حضرت بلال اذان دے لیکن سب کو پتا ہے کہ بلال قسم کھا چکا ہے کے اذان نہیں دو…