Posts

ٹی وی شو میں تھا جب فیصلہ آیا. میں نے سٹیٹس اپ لوڈ کیا کہ واقعی یہ فیصلہ صدیوں یاد رکھا جائے گا. شو سے فارغ ہو کر دیکھا تو تمام احباب نے اس کا منفی مطلب سمجھ کر تبصرے کیے ہوئے تھے. حالانکہ میں سمجھتا ہوں یہ واقعی ایک شاندار فیصلہ ہے. اور واقعی یاد رکھا جائے گا. میں ایسا کیوں کہہ رہا ہوں میں عرض کر دیتا ہوں.
11 دو ججز نے کہا نواز شریف صادق اور امین نہیں رہے اور تین نے کہا ذرا مزید تحقیق کر لی جائے. یعنی کسی ایک نے بھی یہ نہیں کہا کہ نواز شریف صادق اور امین ہیں. 2. سپریم کورٹ ٹرائیل کورٹ نہیں. اس عنصر کو پورا کرنے کے لیے جے آئی ٹی بن گئی. سپریم کورٹ فیصلہ کر دیتی تو کہا جاتا یہ ٹرائیل کورٹ نہیں تھی اس نے تحقیق کے بیر فیصلہ دے دیا. اب جے آئی ٹی تحقیق والا پیلو بھی پورا کر دے گی. 3 جے آئی ٹی میں آءی ایس آئی نہیں ایم آئی کا بندہ ہو گا. یہ قابل غور ہے. آئی ایس آئی وزیر اعظم کے ماتحت ہے ایم آئی نہیں. اس کے ساتھ ایف آئی اے نیب اور ایس ای سی پی کے لوگ ہوں گے. 4. یہ معینہ مدت میں عدالت کو رپورٹ کریں گے نہ کہ اپنے اداروں کو. یہ اسے لٹکا نہیں سکیں گے. ٹائم فریم طے کر دیا گیا ہے 5. جے آئی ٹی کی ت…
مجھے آج بھی وہ پریس کانفرنس یاد ہے جب اُس وقت کے وزیر اطلاعات پرویز رشید اور سابق ڈی جی آئی ایس پی آر عاصم باجوہ کی موجودگی میں بھارتی جاسوس کی گرفتاری ظاہر کی گئی تھی اور قوم کو بتایا گیا تھا کہ ملک کو نقصان پہنچانے کے لئے دشمن کتنے بڑے پیمانے پر منصوبہ بندی کررہا ہے اور اِس منصوبہ بندی کو عملی جامہ پہنانے والا بندہ اب ریاستی اداروں کے ہاتھ لگ گیا ہے۔ اُسی پریس کانفرنس میں کلبھوشن یادو کی ویڈیو بھی جاری کی گئی جس میں اُس نے اپنے تمام منصوبوں کے بارے میں بتایا اور یہ بھی بتایا کہ اُس کو خصوصی طور پر بلوچستان اور کراچی کے حوالے سے ٹارگٹ دیئے گئے ہیں۔ اِس پریس کانفرنس کی خاص بات جہاں ایک طرف کلبھوشن یادو کی گرفتاری ظاہر کرنا تھی، وہیں پریس کانفرنس کے اختتام پر سوال و جواب کا سیشن بھی اہمیت سے بھرپور تھا۔ اُس وقت صحافیوں نے کیا سوال کئے اور پرویز رشید نے کیا جواب دیئے، آئیے اُس پر کچھ بات کرتے ہیں۔
 سوال: سننے میں آیا ہے کہ گزشتہ دنوں پنجاب کی ایک شوگر مِل سے کچھ ’را‘ کے جاسوس پکڑے گئے ہیں اُس کے بارے میں بھی بتائیے۔
 جواب: چونکہ یہ پریس کانفرنس آپ کی خواہش پر صرف کلبھوشن یادو کے ح…
"موجودہ حالات کے ذمہ دار کوئی اور نھیں ھم(عوام) خود ھیں۔" اس نے ھمارے ملک پاکستان کو لوٹا، اس نے مھنگائی کی، اس نے یہ کیا اس نے وہ کیا، اس نے ڈھانڈلی کی تو اس نے ملک کا امن خراب کیا، آجکل اس طرح کے جملے ھم(عوام) اپنے زبان سے کھتے رھتے ھیں اور سامنے ایک شخص ھوتا ھے جو بھت مزے سے سنتا ھے اور پھر وہ بھی کچھ اسی طرح کے جملے تھوڑا اور مرچ مصالحہ لگا کر کھتا ھے مگر افسوس کبھی ھم یہ نھیں سوچتے کہ ھم نے خود کیا کیا ؟ اورنہ ھی اپنے گریبان میں جھاک کر دیکھتے ھیں کہ اس نے تو جو کیا وہ کیا لیکن ھم نے کیا کیا ؟؟؟ • پاکستان کی موجودہ حالت(کرپشن، غربت، قتل عام، ناانصافی) کو دیکھتا ھوں تو وہ حدیث مبارک یاد آتی ھے جس کا مفھوم کچھ یوں ھے کہ "جیسی رعایاں(عوام) ھوگی ان پر ویسے ھی حکمران مسلط کیۓ جائینگے"(اللہ تعالی کمی بیشی معاف کرے) مگر اس حدیث مبارک کے بعد کچھ کھنا باقی نھیں رھتا سوائے اس کے کہ پھلے ھمیں اپنے گریبان میں جھاکنا چاھئے نہ کہ کسی اور کے گریبان میں، آج پاکستان کی جو بھی حالت ھے اس کا ذمہ دار نہ کوئی حکمران ھے، نہ تو کوئی محافظ اور نہ ھی کوئی منصف، اس کے ذمہ دار صرف اور صرف…
Image
"ایک سوچ"
میں بس اسٹاپ پہ کھڑا اس شخص کو جو دیکھنے میں کافی ہینڈسم اور پڑھا لکھا 
نظر آرہا تھا کافی دیر سے گھور رہا تھا کیونکہ وہ شخص اتنی ہی دیر سے بس 
اسٹاپ پہ کھڑی ایک اکیلی خاتون کو مسلسل گھورے جارہا تھا جو کچھ ہی فاصلہ 
پر کھڑیں تھیں۔تھوڑی ہی دیر میں ایک بس کو خاتون نے رکنے کا اشارہ کیا،
بس اسٹاپ پر آکر رکی اورخاتون بس میں سوار ہوگئی۔ خاتون تو چلی گئیں لیکن 
میں نے اس شخص کو گھورنا نہیں چھوڑا کیونکہ میری نیت 
اسے اس بات کا احساس دلانا تھا کہ 
کسی کو کسی کا گھورنا کس قدر برا لگ سکتا ہے اور ہوا بھی یہی 
تھوڑی ہی دیر گزری تھی کہ وہ شخص میری طرف آیا اور آتے ہی میرا گریبان 
پکڑلیا۔ میں نے پیچھے ہٹتے ہوئے اس سے کہا ارے بھائی کیا ہوا؟ چھوڑیں میرا 
گریبان۔ بلا وجہ میں گلے پڑ رہے ہیں۔اس نے کہا ابے تو مجھے اتنی دیر سے 
کیوں گھور رہا ہے؟
میں نے کہا، کیا ہوا بھائی؟ آپ کو دیکھنا گناہ ہے کیا؟
جب آپ بس اسٹاپ پہ کھڑی اس خاتون کو گھور رہے تھے تو میں آپ کو گھورنے
Image
حضرت بلال کی آخری اذان جسے ﺳﻦ ﮐﺮ ﭘﻮﺭﺍ ﻣﺪﯾﻨﮧ ﺭﻭ ﺩﯾﺎ:ﺣﻀﻮﺭ ﷺ ﮐﮯ ﻭﺻﺎﻝ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﺳﯿﺪﻧﺎ ﺑﻼﻝ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ نے قسم کھائی کے میں آج کے بعد، میں اذان نہیں دوں گا "کیونکہ اگر نبی ﷺ کا دیدار نہیں تو اذان بھی نہیں"مدینے میں رہنا مشکل ہوا تو ملک شام چلے گئے. 6 مہینے مدینے لوٹ کر نہیں آئے تو اللہ کے نبی ﷺ خواب میں ملے اور فرمانے لگے.ﺍﮮ ﺑﻼﻝ.. ﯾﮧ ﮐﯿﺎ بے ﻭﻓﺎﺋﯽ؟ ہمارے شہر آنا ہی چھوڑ دیا؟ﺳﯿﺪﻧﺎ ﺑﻼﻝ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ کو یوں لگا کے آپ ﷺ ابھی حیات ہیں اور بلا رہے ہیں تو آپ نے ﺍﻭﻧﭩﻨﯽ کو تیار کیا، 7دن اور 7رات سوائے نماز اور حاجت کے آپ کہیں نہیں رکے، چل سو چل.. چل سو چل..جیسے ہی ﻣﺪﯾﻨﮧ پہنچے تو شور مچا دیا کہ یا رسول اللہ میں آ گیا یا رسول اللہ میں آ گیا.. آگے دیکھا تو قبر مبارک، آپ ﷺ تو تھے نہیں تو غش کھا کر قبر پر گر گئے اور کہنے لگے کہ یا رسول اللہ ﷺ میں تو آ گیا آپ کہاں چلے گئے..؟؟ﻣﺪﯾﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﺧﺒﺮ آگ کی طرح ﭘﮭﯿﻞ ﮔﺌﯽ ﮐﮧ ﻣﺆﺫﻥِ ﺭﺳﻮﻝ ﺣﻀﺮﺕ ﺑﻼﻝ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻨﮧ واپس مدینہ تشریف لے آئے ﮨﯿﮟ.نماز کا وقت آ گیا اور سارے مدینے والوں کی خواہش کے آج حضرت بلال اذان دے لیکن سب کو پتا ہے کہ بلال قسم کھا چکا ہے کے اذان نہیں د…